Showing Page:
1/17
www.Momeen.blogspot.com






























Showing Page:
2/17





























Showing Page:
3/17































Showing Page:
4/17






































Showing Page:
5/17











































Showing Page:
6/17












































Showing Page:
7/17

































Showing Page:
8/17







































Showing Page:
9/17



































Showing Page:
10/17












































Showing Page:
11/17
































Showing Page:
12/17




































Showing Page:
13/17






































Showing Page:
14/17





























Showing Page:
15/17








































Showing Page:
16/17






















































Showing Page:
17/17

















Unformatted Attachment Preview

‫‪www.Momeen.blogspot.com‬‬ ‫عات‬ ‫سورة النَّاز َ‬ ‫ِب ْس ِم َّ ِ‬ ‫الر ِح ِيم‬ ‫الر ْح َم ِن َّ‬ ‫َّللا َّ‬ ‫ت غ َْرقًا‬ ‫عا ِ‬ ‫از َ‬ ‫َوالنَّ ِ‬ ‫﴿‪﴾079:001‬‬ ‫[جالندھری] ان (فرشتوں) کی قسم جو ڈوب کر کھينچ ليتے ہيں‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫فرشتے موت اور ستارے‬ ‫اس سے مراد فرشتے ہيں جو بعض لوگوں کی روحوں کو سختی‬ ‫سے گھسيٹتے ہيں اور بعض روحوں کو بہت آسانی سے نکالتے‬ ‫ہيں جيسے کسی کے بند کھول ديئے جائيں ‪ ،‬کفار کی روحيں‬ ‫کھينچی جاتی ہيں پھر بند کھول ديئے جاتے ہيں اور جہنم ميں ڈبو‬ ‫ديئے جاتے ہيں‪ ،‬يہ ذکر موت کے وقت کا ہے‪ ،‬بعض کہتے ہيں‬ ‫والنازعات غرقا ً سے مراد موت ہے‪ ،‬بعض کہتے ہيں‪ ،‬دونوں پہلی‬ ‫آيتوں سے مطلب ستارے ہيں‪ ،‬بعض کہتے ہيں مراد سخت لڑائی‬ ‫کرنے والے ہيں‪ ،‬ليکن صحيح بات پہلی ہی ہے‪ ،‬يعنی روح نکالنے‬ ‫والے فرشتے‪ ،‬اسی طرح تيسری آيت کی نسبت بھی يہ تينوں‬ ‫تفسيريں مروی ہيں يعنی فرشتے موت اور ستارے۔ حضرت عطاء‬ ‫فرماتے ہيں مراد کشتياں ہيں‪ ،‬اسی طرح سابقات کی تفسير ميں‬ ‫بھی تينوں قول ہيں‪ ،‬معنی يہ ہيں کہ ايمان اور تصديق کی طرف‬ ‫آگے بڑھنے والے‪ ،‬عطا فرماتے ہيں مجاہدين کے گھوڑے مراد‬ ‫ہيں‪ ،‬پھر حکم ہللا کی تعميل تدبير سے کرنے والے اس سے مراد‬ ‫بھی فرشتے ہيں‪ ،‬جيسے حضرت علی وغيرہ کا قول ہے‪ ،‬آسمان‬ ‫سے زين کی طرف ہللا عز و جل کے حکم سے تدبير کرتے ہيں‪،‬‬ ‫امام ابن جرير نے ان اقوال ميں کوئی فيصلہ نہيں کيا‪ ،‬کانپنے والی‬ ‫کے کانپنے اور اس کے پيچھے آنے والی کے پيچھے آنے سے‬ ‫مراد دونوں نفخہ ہيں‪ ،‬پہلے نفخہ کا بيان اس آيت ميں بھی ہے‬ ‫(يوم ترجف االرض والجبال) جس دن زمين اور پہاڑ کپکپا جائيں‬ ‫گے‪ ،‬دوسرے نفخہ کا بيان اس آيت ميں ہے (وحملت االرض‬ ‫والجبال فدکتا دکتہ واحدة) اور زمين اور پہاڑ اٹھا لئے جائيں گے‪،‬‬ ‫پھر دونوں ايک ہی دفعہ چور چور کر ديئے جائيں گے‪ ،‬مسند‬ ‫احمد کی حديث ميں ہے رسول ہللا صلی ہللا عليہ وسلم فرماتے ہيں‬ ‫کاپنے والی آئے گی اس کے پيچھے ہی پيچھے آنے والی ہو گی‬ ‫يعنی موت اپنے ساتھ اپنی آفتوں کو لئے ہوئے آئے گی‪ ،‬ايک‬ ‫شخص نے کہا حضور صلی ہللا عليہ وسلم اگر ميں اپنے وظيفہ کا‬ ‫تمام وقت آپ پر درود پڑھنے ميں گزاروں تو؟ آپ نے فرمايا پھر‬ ‫تو ہللا ٰ‬ ‫تعالی تجھے دنيا اور آخرت کے تمام غم و رنج سے بچا لے‬ ‫گا۔ ترمذی ميں ہے کہ وہ تہائی رات گزرنے کے بعد رسول ہللا‬ ‫صلی ہللا عليہ وسلم کھڑے ہوتے اور فرماتے لوگو ہللا کو ياد کرو‬ ‫کپکانے والی آ رہی ہے پھر اس کے پيچھے ہی اور آ رہی ہے‪،‬‬ ‫موت اپنے ساتھ کی تمام آفات کو لئے ہوئے چلی آ رہی ہے‪ ،‬اس‬ ‫دن بہت سے دل ڈر رہے ہوں گے‪ ،‬ايسے لوگوں کی نگاہيں ذلت و‬ ‫حقارت کے ساتھ پست ہوں گی کيونکہ وہ اپنے گناہوں اور ہللا کے‬ ‫عذاب کا معائنہ کر چکے ہيں‪ ،‬مشرکين جو روز قيامت کے منکر‬ ‫تھے اور کہا کرتے تھے کہ کيا قبروں ميں جانے کے بعد بھی ہم‬ ‫زندہ کئے جائيں گے؟ وہ آج اپنی اس زندگی کو رسوائی اور برائی‬ ‫کے ساتھ آنکھوں سے ديکھ ليں گے‪ ،‬حافرة کہتے ہيں قبروں کو‬ ‫بھی ‪ ،‬يعنی قبروں ميں چلے جانے کے بعد جسم کے ريزے‬ ‫ريزے ہو جانے کے بعد‪ ،‬جسم اور ہڈيوں کے گل سڑ جانے اور‬ ‫کھوکھلی ہو جانے کے بعد بھی کيا ہم زندہ کئے جائيں گے؟ پھر‬ ‫تو يہ دوبار کی زندگی خسارے اور گھاٹے والی ہو گی‪ ،‬کفار‬ ‫قريش کا يہ مقولہ تھا‪ ،‬حافرة کے معنی موت کے بعد کی زندگی‬ ‫کے بھی مروی ہيں اور جہنم کا نام بھی ہے اس کے نام بہت سے‬ ‫ہيں جيسے جحيم ‪ ،‬سقر‪ ،‬جہنم‪ ،‬ہاويہ‪ ،‬حافرہ‪ ،‬لظی‪ ،‬حطمہ وغيرہ‬ ‫اب ہللا ٰ‬ ‫تعالی فرماتا ہے کہ جس چيز کو يہ بڑی بھاری‪ ،‬ان ہونی‬ ‫اور ناممکن سمجھے ہوئے ہيں وہ ہماری قدرت کاملہ کے ماتحت‬ ‫ادنی سی بات ہے‪ ،‬ادھر ايک آواز دی ادھر سب زندہ ہو کر‬ ‫ايک ٰ‬ ‫ايک ميدان ميں جمع ہو گئے‪ ،‬يعنی ہللا ٰ‬ ‫تعالی حضرت اسرافيل کو‬ ‫حکم دے گا وہ صور پھونک ديں گے بس ان کے صور پھونکتے‬ ‫ہی تمام اگلے پچھلے جی اٹھيں گے اور ہللا کے سامنے ايک ہی‬ ‫ميدان ميں کھڑے ہو جائيں گے‪ ،‬جيسے اور جگہ ہے آيت (يوم‬ ‫يدعو کم)‪ ،‬الخ‪ ،‬جس دن وہ تمہيں پکارے گا اور تم اس کی تعريفيں‬ ‫کرتے ہوئے اسے جواب دو گے اور جان لو گے کہ بہت ہی کم‬ ‫ٹھہرے اور جگہ فرمايا آيت (وما امرنا اال واحدہ کلمح بالبصر)‬ ‫ہمارا حکم بس ايسا ايک بارگی ہو جائے گا جيسے آنکھ کا جھپکنا‬ ‫اور جگہ ہے آيت (وما امر الساعتہ االکلمح البصر او ھو اقرب)‬ ‫امر قيامت مثل آنکھ جھپکنے کے ہے بلکہ اس سے بھی زيادہ‬ ‫قريب ‪ ،‬يہاں بھی يہی بيان ہو رہا ہے کہ صرف ايک آواز ہی کی‬ ‫دير ہے اس دن پروردگار سخت غضبناک ہو گا‪ ،‬يہ آواز بھی‬ ‫غصہ کے ساتھ ہو گی‪ ،‬يہ آخری نفخہ ہے جس کے پھونکے‬ ‫جانے کے بعد ہی تمام لوگ زمين کے اوپر آ جائيں گے‪ ،‬حاالنکہ‬ ‫اس سے پہلے نيچے تھے‪ ،‬ساھرہ روئے زمين کو کہتے ہيں اور‬ ‫سيدھے صاف ميدان کو بھی کہتے ہيں‪ ،‬ثوری کہتے ہيں مراد اس‬ ‫سے شام کی زمين ہے‪ ،‬عثمان بن ابوالعاليہ کا قول ہے مراد بيت‬ ‫المقدس کی زمين ہے۔ وہب بن منبہ کہتے ہيں بيت المقدس کے‬ ‫ايک طرف يہ ايک پہاڑ ہے‪ ،‬قتادہ کہتے ہيں جہنم کو بھی ساھرہ‬ ‫کہتے ہيں۔ ليکن يہ اقوال سب کے سب غريب ہيں‪ ،‬ٹھيک قول پہال‬ ‫ہی ہے يعنی روئے زمين کے سب لوگ زمين پر جمع ہو جائيں‬ ‫گے‪ ،‬جو سفيد ہو گی اور بالکل صاف اور خالی ہو گی جيسے‬ ‫ميدے کی روٹی ہوتی ہے اور جگہ ہے آيت (يوم تبدل االرض غير‬ ‫االرض) الخ‪ ،‬يعنی جس دن يہ زمين بدل کر دوسری زمين ہو گی‬ ‫اور آسمان بھی بدل جائيں گا اور سب مخلوق ہللا ٰ‬ ‫تعالی واحد و قہار‬ ‫کے روبرو ہو جائے گی اور جگہ ہے لوگ تجھ سے پہاڑوں کے‬ ‫بارے پوچھتے ہيں تو کہہ دے کہ انہيں ميرا رب ٹکڑے ٹکڑے کر‬ ‫دے گا اور زمين بالکل ہموار ميدان بن جائے گی جس ميں کوئی‬ ‫موڑ توڑ ہو گا‪ ،‬نہ اونچی نيچی جگہ اور جگہ ہے ہم پہاڑوں کو‬ ‫چلنے واال کر ديں گے اور زمين صاف ظاہر ہو جائے گی‪،‬‬ ‫غرض ايک بالکل نئی زمين ہو گی جس پر نہ کبھی کوئی خطا‬ ‫ہوئی نہ قتل و گناہ۔‬ ‫ت نَ ْش ً‬ ‫َوالنَّا ِش َ‬ ‫طا‬ ‫طا ِ‬ ‫﴿‪﴾079:002‬‬ ‫[جالندھری] اور ان کی جو آسانی سے کھول ديتے ہيں‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫س ْب ًحا‬ ‫سا ِب َحا ِ‬ ‫َوال َّ‬ ‫ت َ‬ ‫﴿‪﴾079:003‬‬ ‫[جالندھری] اور ان کی جو تيرتے پھرتے ہيں‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫س ْبقًا‬ ‫سا ِبقَا ِ‬ ‫فَال َّ‬ ‫ت َ‬ ‫﴿‪﴾079:004‬‬ ‫[جالندھری] پھر لپک کر آگے بڑھتے ہيں‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫ت أ َ ْم ًرا‬ ‫فَ ْال ُم َد ِب َرا ِ‬ ‫﴿‪﴾079:005‬‬ ‫[جالندھری] پھر (دنيا کے) کاموں کا انتظام کرتے ہيں‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫اجفَةُ‬ ‫ف َّ‬ ‫يَ ْو َم ت َ ْر ُج ُ‬ ‫الر ِ‬ ‫﴿‪﴾079:006‬‬ ‫[جالندھری] (کہ وہ دن آ کر رہے گا) جس دن زمين کو بھونچال‬ ‫آئے گا‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫الرا ِدفَةُ‬ ‫تَتْبَعُ َھا َّ‬ ‫﴿‪﴾079:007‬‬ ‫[جالندھری] پھر اس کے پيچھے اور (بھونچال) آئے گا‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫اجفَةٌ‬ ‫قُلُ ٌ‬ ‫وب يَ ْو َمئِ ٍذ َو ِ‬ ‫﴿‪﴾079:008‬‬ ‫[جالندھری] اس دن (لوگوں) کے دل خائف ہو رہے ہوں گے‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫ار َھا خَا ِشعَةٌ‬ ‫ص ُ‬ ‫أ َ ْب َ‬ ‫﴿‪﴾079:009‬‬ ‫[جالندھری] اور آنکھيں جھکی ہوئی‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫يَقُولُونَ أ َ ِإنَّا لَ َم ْردُو ُدونَ ِفي ْال َحا ِف َر ِة‬ ‫﴿‪﴾079:010‬‬ ‫[جالندھری] (کافر) کہتے ہيں کيا ہم الٹے پاؤں پھر لوٹيں گے؟‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫أ َ ِإذَا ُكنَّا ِع َ‬ ‫ظا ًما ن َِخ َرة ً‬ ‫﴿‪﴾079:011‬‬ ‫[جالندھری] بھال جب ہم کھوکھلی ہڈياں ہو جائيں گے (تو پھر‬ ‫زندہ کيے جائيں گے)‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫قَالُوا تِ ْل َك ِإذًا َك َّرة ٌ خَا ِس َرة ٌ‬ ‫﴿‪﴾079:012‬‬ ‫[جالندھری] کہتے ہيں کہ يہ لوٹنا تو (موجب) زياں ہے‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫اح َدة ٌ‬ ‫ي زَ ْج َرة ٌ َو ِ‬ ‫فَإِنَّ َما ِھ َ‬ ‫﴿‪﴾079:013‬‬ ‫[جالندھری] وہ تو صرف ايک ڈانٹ ہوگی‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫فَإِذَا ُھ ْم بِال َّ‬ ‫سا ِھ َرةِ‬ ‫﴿‪﴾079:014‬‬ ‫[جالندھری] اس وقت وہ (سب) ميدان (حشر) ميں آ جمع ہوں گے۔‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫اك َحد ُ‬ ‫سى‬ ‫َھ ْل أَت َ َ‬ ‫ِيث ُمو َ‬ ‫﴿‪﴾079:015‬‬ ‫موسی کی حکايت پہنچی ہے‬ ‫[جالندھری] بھال تم کو‬ ‫ٰ‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫معفرت دل حق کا مطيع و فرماں بردار ہوتا ہے‬ ‫ہللا ٰ‬ ‫تعالی اپنے رسول حضرت محمد صلی ہللا عليہ وسلم کو خبر‬ ‫موسی عليہ‬ ‫ديتا ہے کہ اس نے اپنے بندے اور رسول حضرت‬ ‫ٰ‬ ‫السالم کو فرعون کی طرف بھيجا اور معجزات سے ان کی تائيد‬ ‫کی‪ ،‬ليکن باوجود اس کے فرعون اپنی سرکشی اور اپنے کفر سے‬ ‫باز نہ آيا باالخر ہللا کا عذاب اترا اور برباد ہو گيا‪ ،‬اسی طرح اے‬ ‫پيغمبر آخر الزمان صلی ہللا عليہ وسلم آپ کے مخالفين کا بھی‬ ‫حشر ہو گا۔ اسی لئے اس واقعہ کے خاتمہ پر فرياد ڈر والوں کے‬ ‫لئے اس ميں عبرت ہے ‪ ،‬پس فرماتا ہے کہ تجھے خبر بھی ہے؟‬ ‫موسی عليہ السالم کو اس کے رب نے آواز دی جبکہ وہ ايک‬ ‫ٰ‬ ‫طوی ہے۔ اس کا تفصيل سے‬ ‫مقدس ميدان ميں تھے جس کا نام‬ ‫ٰ‬ ‫بيان سورہ طہ ميں گزر چکا ہے‪ ،‬آواز دے کر فرمايا کہ فرعون‬ ‫نے سرکشی تکبر‪ ،‬تجبر اور تمرد اختيار کر رکھا ہے تم اس کے‬ ‫پاس پہنچو اور اسے ميرا يہ پيغام دو کہ کيا تو چاہتا ہے کہ ميری‬ ‫بات مان کر اس راہ پر چلے جو پاکيزگی کی راہ ہے‪ ،‬ميری سن‬ ‫ميری مان‪ ،‬سالمتی کے ساتھ پاکيزگی حاصل کر لے گا‪ ،‬ميں‬ ‫تجھے ہللا کی عبادت کے وہ ريقے بتاؤں گا جس سے تيرا دل نرم‬ ‫اور روشن ہو جائے اس ميں خشوع و خضع پيدا ہو اور دل کی‬ ‫موسی فرعون کے پاس پہنچے‬ ‫سختی اور بدبختی دور ہو۔ حضرت‬ ‫ٰ‬ ‫ہللا کا فرمان پہنچايا‪ ،‬حجت ختم کی دالئل بيان کئے يہاں تک کہ‬ ‫اپنی سچائی کے ثبوت ميں معجزات بھی دکھائے ليکن وہ برابر‬ ‫موسی کی باتوں کی نافرمانی‬ ‫حق کی تکذيب کرتا رہا اور حضرت‬ ‫ٰ‬ ‫پر جما رہا چونکہ دل ميں کفر جا گزيں ہو چکا تھا اس سے‬ ‫طبيعت نہ ہٹی اور حق واضح ہو جانے کے باوجود ايمان و تسليم‬ ‫نصيب نہ ہوئی‪ ،‬يہ اور بات ہے کہ دل سے جانتا تھا کہ يہ حق‬ ‫برحق نبی ہيں اور ان کی تعليم بھی برحق ہے ليکن دل کی معرفت‬ ‫اور چيز ہے اور ايمان اور چيز ہے دل کی معرفت پر عمل کرنے‬ ‫کا نام ايمان ہے کہ حق کا تابع فرمان بن جائے اور ہللا رسول کی‬ ‫باتوں پر عمل کرنے کے لئے جھک جائے۔ پھر اس نے حق سے‬ ‫منہ موڑ ليا اور خالف حق کوشش کرنے لگا جادو گروں کو جمع‬ ‫موسی کو نيچا دکھانا چاہا۔ اپنی‬ ‫کر کے ان کے ہاتھوں حضرت‬ ‫ٰ‬ ‫قوم کو جمع کيا اور اس ميں منادی کی کہ تم سب ميں بلند و باال‬ ‫ميں ہی ہوں‪ ،‬اس سے چاليس سال پہلے وہ کہہ چکا تھا کہ آيت (ما‬ ‫علمت لکم من الہ غيری) يعنی ميں نہيں جانتا کہ ميرے سوا تمہارا‬ ‫معبود کوئی اور بھی ہو‪ ،‬اب تو اس کی طغيانی حد سے بڑھ گئی‬ ‫اور صاف کہہ ديا کہ ميں ہی رب ہوں‪ ،‬بلنديوں واال اور سب پر‬ ‫غالب ميں ہی ہوں‪ ،‬ہللا ٰ‬ ‫تعالی فرماتا ہے ہم نے بھی اس سے وہ‬ ‫اتنقام ليا جو اس جيسے تمام سرکشوں کے لئے ہميشہ ہميشہ سبب‬ ‫عبرت بن جائے دنيا ميں بھی اور آخرت ميں بھی جس کے بدترين‬ ‫عذاب تو ابھی باقی ہيں‪ ،‬جيسے فرمايا آيت (وجعلنا ھم ائيمتہ‬ ‫يدعون الی النار و يوم القيامتہ ال ينصرون) يعنی ہم نے انہيں جہنم‬ ‫کی طرف بالنے والے پيش رو بنائے قيامت کے دن يہ مدد نہ‬ ‫کئے جائيں گے‪ ،‬پس صحيح تر معنی آيت کے يہی ہيں کہ آخرت‬ ‫اولی سے مراد دنيا اور آخرت ہے‪ ،‬بعض نے کہا ہے اول‬ ‫اور ٰ‬ ‫آخر سے مراد اس کے دونوں قول ہيں يعنی پہلے يہ کہنا کہ‬ ‫ميرے علم ميں ميرے سوا تمہارا کوئی ہللا نہيں‪ ،‬پھر يہ کہنا کہ‬ ‫تمہارا سب کا بلند رب ميں ہوں‪ ،‬بعض کہتے ہيں مراد کفر و‬ ‫نافرمانی ہے‪ ،‬ليکن صحيح قول پہال ہی ہے اور اس ميں کوئی‬ ‫شک نہيں‪ ،‬اس ميں ان لوگوں کے لئے عبرت و نصيحت ہے جو‬ ‫نصيحت حاصل کريں اور باز آ جائيں۔‬ ‫ِإ ْذ نَا َداہُ َربُّهُ ِب ْال َوا ِد ْال ُمقَ َّد ِس ُ‬ ‫ط ًوى‬ ‫﴿‪﴾079:016‬‬ ‫[جالندھری] جب ان کے پروردگار نے ان کو پاک ميدان (يعنی)‬ ‫طوی ميں پکارا‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫ع ْونَ ِإنَّهُ َ‬ ‫طغَى‬ ‫ا ْذھَبْ ِإلَى فِ ْر َ‬ ‫﴿‪﴾079:017‬‬ ‫[جالندھری] (اور حکم ديا) کہ فرعون کے پاس جاؤ وہ سرکش ہو‬ ‫رہا ہے‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫فَقُ ْل َھ ْل لَ َك ِإلَى أ َ ْن تَزَ َّكى‬ ‫﴿‪﴾079:018‬‬ ‫[جالندھری] اور (اس سے) کہو کيا تو چاہتا ہے کہ پاک ہو جائے‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫َوأ َ ْھ ِديَ َك ِإلَى َر ِب َك فَت َ ْخشَى‬ ‫﴿‪﴾079:019‬‬ ‫[جالندھری] اور ميں تجھے تيرے پروردگار کا راستہ بتاؤں تاکہ‬ ‫تجھ کو خوف (پيدا) ہو‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫فَأ َ َراہُ ْاْليَةَ ْال ُكب َْرى‬ ‫﴿‪﴾079:020‬‬ ‫[جالندھری] غرض انہوں نے اس کو بڑی نشانی دکھائی۔‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫صى‬ ‫ب َو َ‬ ‫فَ َكذَّ َ‬ ‫ع َ‬ ‫﴿‪﴾079:021‬‬ ‫[جالندھری] اس نے جھٹاليا اور نہ مانا‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫ث ُ َّم أ َ ْدبَ َر يَ ْسعَى‬ ‫﴿‪﴾079:022‬‬ ‫[جالندھری] پھر لوٹ گيا اور تدبيريں کرنے لگا‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫فَ َحش ََر فَنَا َدى‬ ‫﴿‪﴾079:023‬‬ ‫[جالندھری] اور (لوگوں) کو اکھٹا کيا اور پکارا‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫فَقَا َل أَنَا َربُّ ُك ُم ْاْل َ ْعلَى‬ ‫﴿‪﴾079:024‬‬ ‫[جالندھری] کہنے لگا کہ تمہارا سب سے بڑا مالک ميں ہوں‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫َّللاُ نَ َكا َل ْاْل ِخ َر ِة َو ْاْلُولَى‬ ‫فَأ َ َخذَہُ َّ‬ ‫﴿‪﴾079:025‬‬ ‫[جالندھری] تو خدا نے اس کو دنيا اور آخرت (دونوں) کے عذاب‬ ‫ميں پکڑ ليا‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫ِإ َّن ِفي ذَ ِل َك لَ ِعب َْرة ً ِل َم ْن يَ ْخشَى‬ ‫﴿‪﴾079:026‬‬ ‫[جالندھری] جو شخص (خدا سے) ڈر رکھتا ہے اس کيلئے اس‬ ‫(قصے) ميں عبرت ہے‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫س َما ُء ۚ بَنَا َھا‬ ‫أَأ َ ْنت ُ ْم أ َ َ‬ ‫ش ُّد خ َْلقًا أ َ ِم ال َّ‬ ‫﴿‪﴾079:027‬‬ ‫[جالندھری] بھال تمہارا بنانا مشکل ہے يا آسمان کا؟ اسی نے اس‬ ‫کو بنايا‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫موت و حيات کی سرگزشت‬ ‫جو لوگ مرنے کے بعد زندہ ہونے کے منکر تھے‪ ،‬انہيں‬ ‫پروردگار دليليں ديتا ہے کہ تمہاری پيدائش سے تو بہت زيادہ‬ ‫مشکل پيدائش آسمانوں کی ہے جيسے اور جگہ ہے آيت (لخلق‬ ‫السموات واالرض اکبر من خلق الناس) يعنی زمين و آسمان کی‬ ‫پيدائش انسانوں کی پيدائش سے زيادہ بھاری ہے اور جگہ ہے آيت‬ ‫(اوليس الذی خلق السموات واالرض بقادر علی ان يخلق مثلھم بلی‬ ‫وھو الخالق العليم) کيا جس نے زمين و آسمان پيدا کر ديا ہے ان‬ ‫جيسے انسانوں کو دوبارہ پيدا کرنے پر قدرت نہيں رکھتا؟ ضرور‬ ‫وہ قادر ہے اور وہ ہی بڑا پيدا کرنے واال اور خوب جاننے واال‬ ‫ہے‪ ،‬آسمان کو اس نے بنايا يعنی بلند و باال خوب چوڑا اور کشادہ‬ ‫اور بالکل برابر بنايا پھر اندھيری راتوں ميں خوب چمکنے والے‬ ‫ستارے اس ميں جڑ ديئے‪ ،‬رات کو سياہ اور اندھيرے والی بنايا‬ ‫اور دن کو روشن اور نور واال بنايا اور زمين کو اس کے بعد بچھا‬ ‫ديا يعنی پانی اور چارہ نکاال۔ سورہ حم سجدہ ميں يہ بيان گزر چکا‬ ‫ہے کہ زمين کی پيدائش تو آسمان سے پہلے ہے ہاں اس کی‬ ‫برکات کا اظہار آسمانوں کی پيدائش کے بعد ہوا جس کا بيان يہاں‬ ‫ہو رہا ہے‪ ،‬ابن عباس اور بہت سے مفسرين سے يہی مروی ہے‪،‬‬ ‫امام ابن جرير بھی اسی کو پسند فرماتے ہيں‪ ،‬اس کا تفصيلی بيان‬ ‫گزر چکا ہے اور پہاڑوں کو اس نے خوب مضبوط گاڑ ديا ہے وہ‬ ‫حکمتوں واال صحيح علم واال ہے اور ساتھ ہی اپنی مخلوق پر بيحد‬ ‫مہربان ہے‪ ،‬مسند احمد ميں ہے رسول ہللا صلی ہللا عليہ وسلم‬ ‫فرماتے ہيں کہ جب ہللا ٰ‬ ‫تعالی نے زمين کو پيدا کيا وہ ہلنے لگی‬ ‫پروردگار نے پہاڑوں کو پيدا کر کے زمين پر گاڑ ديا جس سے‬ ‫وہ ٹھہر گئی فرشتوں کو اس سے سخت تر تعجب ہوا اور پوچھنے‬ ‫لگے ہللا تيری مخلوق ميں ان پہاڑوں سے بھی زيادہ سخت چيز‬ ‫کوئی اور ہے؟ ہللا ٰ‬ ‫تعالی نے فرمايا ہاں لوہا‪ ،‬پوچھا اس سے بھی‬ ‫زيادہ سخت ؟ فرمايا آگ‪ ،‬پوچھا اس سے بھی زيادہ سخت؟ فرمايا‬ ‫ہاں پانی‪ ،‬پوچھا اس سے بھی زيادہ سخت؟ فرمايا ہوا‪ ،‬پوچھا‬ ‫پروردگار کيا تيری مخلوق ميں اس سے بھاری کوئی اور چيز‬ ‫ہے؟ فرمايا ہاں ابن آدم وہ يہ ہے کہ اپنے دائيں ہاتھ سے جو خرچ‬ ‫کرتا ہے اس کی خبر پائيں ہاتھ کو بھی نہيں ہوتی‪ ،‬ابن جرير ميں‬ ‫حضرت علی رضی ہللا ٰ‬ ‫تعالی عنہ سے مروی ہے کہ جب زمين‬ ‫کو ہللا ٰ‬ ‫تعالی نے پيدا کيا تو وہ کانپنے لگی اور کہنے لگی تو آدم‬ ‫اور اس کی اوالد کو پيدا کرنے واال ہے جو اپنی گندگی مجھ پر‬ ‫ڈاليں گے اور ميری پيٹھ پر تيری نافرمانياں کريں گے‪ ،‬ہللا ٰ‬ ‫تعالی‬ ‫نے پہاڑ گاڑ کر زمين کو ٹھہرا ديا بہت سے پہاڑ تم ديکھ رہے ہو‬ ‫اور بہت سے تمہاری نگاہوں سے اوجھل ہيں‪ ،‬زمين کا پہاڑوں‬ ‫کے بعد سکون حاصل کرنا بالکل ايسا ہی تھا جيسے اونٹ کو ذبح‬ ‫کرتے ہی اس کا گوشت تھرکتا رہتا ہے پھر کچھ دير بعد ٹھہر جاتا‬ ‫ہے۔ پھر فرماتا ہے کہ يہ سب تمہارے اور تمہارے جانوروں کے‬ ‫فائدے کے لئے ہے‪ ،‬يعنی زمين سے چشموں اور نہروں کا جاری‬ ‫کرنا زمين کے پوشيدہ خزانوں کو ظاہر کرنا کھيتياں اور درخت‬ ‫اگانا پہاڑوں کا گاڑنا تاکہ زمين سے پورا پورا فائدہ تم اٹھا سکو ‪،‬‬ ‫يہ سب باتيں انسانوں کے فائدے کيلئے ہيں اور ان کے جانوروں‬ ‫کے فائدے کے لئے پھر وہ جانور بھی انہی کے فائدے کے لئے‬ ‫ہيں کہ بعض کا گوشت کھاتے ہيں بعض پر سوارياں ليتے ہيں اور‬ ‫اپنی عمر اس دنيا ميں سکھ چين سے بسر کر رہے ہيں۔‬ ‫س َّوا َھا‬ ‫س ْم َك َھا فَ َ‬ ‫َرفَ َع َ‬ ‫﴿‪﴾079:028‬‬ ‫[جالندھری] اس کی چھت کو اونچا کيا پھر اسے برابر کر ديا‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫َوأ َ ْغ َ‬ ‫ض َحا َھا‬ ‫ش لَ ْيلَ َھا َوأ َ ْخ َر َج ُ‬ ‫ط َ‬ ‫﴿‪﴾079:029‬‬ ‫[جالندھری] اور اسی نے رات کو تاريک بنايا اور (دن کو) دھوپ‬ ‫نکالی‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫ض بَ ْع َد ذَ ِل َك َد َحا َھا‬ ‫َو ْاْل َ ْر َ‬ ‫﴿‪﴾079:030‬‬ ‫[جالندھری] اور اس کے بعد زمين کو پھيال ديا‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫عا َھا‬ ‫أ َ ْخ َر َج ِم ْن َھا َما َء َھا َو َم ْر َ‬ ‫﴿‪﴾079:031‬‬ ‫[جالندھری] اسی نے اس ميں سے اس کا پانی نکاال اور چارا اگايا‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫سا َھا‬ ‫َو ْال ِجبَا َل أ َ ْر َ‬ ‫﴿‪﴾079:032‬‬ ‫[جالندھری] اور اس پر پہاڑوں کا بوجھ رکھ ديا‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫ام ُك ْم‬ ‫َمتَا ً‬ ‫عا لَ ُك ْم َو ِْل َ ْنعَ ِ‬ ‫﴿‪﴾079:033‬‬ ‫[جالندھری] يہ سب کچھ تمہارے اور تمہارے چوپايوں کے فائدے‬ ‫کيليے (کيا)‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫ت َّ‬ ‫الطا َّمةُ ْال ُكب َْرى‬ ‫فَإِذَا َجا َء ِ‬ ‫﴿‪﴾079:034‬‬ ‫[جالندھری] تو جب بڑی آفت آئے گی‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫انتہائی ہولناک لرزہ خيز لمحات‬ ‫الکبری سے مراد قيامت کا دن ہے اس لئے کہ وہ ہولناک‬ ‫طامتہ‬ ‫ٰ‬ ‫اور بڑے ہنگامے واال دن ہو گا‪ ،‬جيسے اور جگہ ہے آيت‬ ‫(والساعتہ آدھی وامر) يعنی قيامت بڑی سخت اور ناگوار چيز ہے‪،‬‬ ‫اس دن ابن آدم اپنے بھلے برے اعمال کو ياد کرے گا اور کافی‬ ‫نصيحت حاصل کر لے گا‪ ،‬جيسے اور جگہ ہے آيت (يومئذ يتذکر‬ ‫االنسان وانی لہ الذکری) يعنی اس دن آدمی نصيحت حاصل کر لے‬ ‫گا ليکن آج کی نصيحت اسے کچھ فائدہ نہ دے گی‪ ،‬لوگوں کے‬ ‫سامنے جہنم الئی جائے گی اور وہ اپنی آنکھوں سے اسے ديکھ‬ ‫ليں گے اس دن سرکشی کرنے والوں اور دنيا کو دين پر ترجيح‬ ‫دينے والوں کو ٹھکانا جہنم ہو گا‪ ،‬ان کی خوراک زقوم ہو گا اور‬ ‫ان کا پانی حميم ہو گا‪ ،‬ہاں ہمارے سامنے کھڑے ہونے سے ڈرتے‬ ‫رہنے والوں‪ ،‬اپنے آپ کو نفسانی خواہشوں سے بچاتے رہنے‬ ‫والوں خوف ہللا دل ميں رکھنے والوں اور برائيوں سے باز رہنے‬ ‫والوں کا ٹھکانا جنت ہے اور وہاں کی تمام نعمتوں کے حصہ دار‬ ‫صرف يہی ہيں‪ ،‬پھر فرمايا کہ قيامت کے بارے ميں تم سے سوال‬ ‫ہو رہے ہيں تم کہہ دو کہ نہ مجھے اس کا علم ہے نہ مخلوق ميں‬ ‫سے کسی اور کو صرف ہللا ہی جانتا ہے کہ قيامت کب آئے گی۔‬ ‫اس کا صحيح وقت کسی کو معلوم نہيں وہ زمين و آسمان پر‬ ‫بھاری پڑ رہی ہے‪ ،‬حاالنکہ دراصل اس کا علم سوائے ہللا تبارک‬ ‫و ٰ‬ ‫تعالی کے اور کسی کو نہيں‪ ،‬حضرت جبرائيل عليہ السالم بھی‬ ‫جس وقت انسانی صورت ميں آپ کے پاس آئے اور کچھ سواالت‬ ‫کئے جن کے جوابات آپ نے ديئے پھر يہی قيامت کے دن کے‬ ‫تعيين کا سوال کيا تو آپ نے فرمايا جس سے پوچھتے ہو‪ ،‬نہ وہ‬ ‫اسے جانتا ہے نہ خود پوچھنے والے کو اس کا علم ہے‪ ،‬پھر‬ ‫فرمايا کہ اے نبی تم تو صرف لوگوں کے ڈرانے والے ہو اور اس‬ ‫سے نفع انہيں کو پہنچے گا جو اس خوفناک دن کا ڈر رکھتے ہيں‬ ‫اور تياری کر ليں گے اور اس دن کے خطرے سے بچ جائيں‬ ‫گے‪ ،‬باقی جو لوگ ہيں وہ آپ کے فرمان سے عبرت حاصل نہيں‬ ‫کريں گے بلکہ مخالفت کريں گے اور اس دن بدترين نقصان اور‬ ‫مہلک عذابوں ميں گرفتار ہوں گے‪ ،‬لوگ جب اپنی اپنی قبروں‬ ‫سے اٹھ کر محشر کے ميدان ميں جمع ہوں گے‪ ،‬اس وقت اپنی دنيا‬ ‫کی زندگی انہيں بہت ہی تھوڑی نظر آئے گی اور ايسا معلوم ہو گا‬ ‫کہ صرف صبح کا يا صرف شام کا کچھ حصہ دنيا ميں گزارا ہے‪،‬‬ ‫ظہر سے لے کر آفتاب کے غروب ہونے کے وقت کو عشيہ‬ ‫کہتے ہيں اور سورج نکلنے سے لے کر آدھے دن تک کے وقت‬ ‫ضحی کہتے ہيں‪ ،‬مطلب يہ ہے کہ آخرت کو ديکھ کر دنيا کی‬ ‫کو‬ ‫ٰ‬ ‫لمبی عمر بھی اتنی کم محسوس ہونے لگی۔ سورہ نازعات کی‬ ‫تفسير ختم ہوئی‪ ،‬فالحمد ہللا رب العالمين۔‬ ‫س ُ‬ ‫سعَى‬ ‫ان َما َ‬ ‫اْل ْن َ‬ ‫يَ ْو َم يَتَذَ َّك ُر ْ ِ‬ ‫﴿‪﴾079:035‬‬ ‫[جالندھری] اس دن انسان اپنے کاموں کو ياد کرے گا‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫ت ْال َج ِحي ُم ِل َم ْن يَ َرى‬ ‫َوبُ ِرزَ ِ‬ ‫﴿‪﴾079:036‬‬ ‫[جالندھری] اور دوزخ ديکھنے والے کے سامنے نکال کر رکھ‬ ‫دی جائے گی۔‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫فَأ َ َّما َم ْن َ‬ ‫طغَى‬ ‫﴿‪﴾079:037‬‬ ‫[جالندھری] تو جس نے سرکشی کی‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫َوآث َ َر ْال َحيَاة َ ال ُّد ْنيَا‬ ‫﴿‪﴾079:038‬‬ ‫[جالندھری] اور دنيا کی زندگی کو مقدم سمجھا‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫ْ‬ ‫ي ْال َمأ ْ َوى‬ ‫ھ‬ ‫يم‬ ‫ح‬ ‫ج‬ ‫ال‬ ‫فَإِ َّن‬ ‫ِ‬ ‫ِ‬ ‫َ‬ ‫َ‬ ‫َ‬ ‫﴿‪﴾079:039‬‬ ‫[جالندھری] اس کا ٹھکانا دوزخ ہے‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫ع ِن ْال َھ َوى‬ ‫س َ‬ ‫ام َر ِب ِه َونَ َھى النَّ ْف َ‬ ‫َوأ َ َّما َم ْن خ َ‬ ‫َاف َمقَ َ‬ ‫﴿‪﴾079:040‬‬ ‫[جالندھری] اور جو اپنے پروردگار کے سامنے کھڑے ہونے‬ ‫سے ڈرتا اور دل کو خواہشوں سے روکتا رہا‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫ي ْال َمأ ْ َوى‬ ‫فَإِ َّن ْال َجنَّةَ ِھ َ‬ ‫﴿‪﴾079:041‬‬ ‫[جالندھری] اس کا ٹھکانا بہشت ہے‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫سا َھا‬ ‫ع ِن ال َّ‬ ‫سا َ‬ ‫يَ ْسأَلُون ََك َ‬ ‫ع ِة أَيَّانَ ُم ْر َ‬ ‫﴿‪﴾079:042‬‬ ‫[جالندھری] (اے پيغمبر صلی ہللا عليہ وسلم! لوگ) تم سے قيامت‬ ‫کے بارے ميں پوچھتے ہيں کہ اس کا وقوع کب ہوگا؟‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫ت ِم ْن ِذ ْك َرا َھا‬ ‫يم أ َ ْن َ‬ ‫ِف َ‬ ‫﴿‪﴾079:043‬‬ ‫[جالندھری] سو تم اسکے ذکر سے کس فکر ميں ہو؟‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫ِإلَى َر ِب َك ُم ْنت َ َھا َھا‬ ‫﴿‪﴾079:044‬‬ ‫[جالندھری] اس کا منتہا (يعنی واقع ہونے کا وقت) تمہارے‬ ‫پروردگار ہی کو معلوم ہے‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫ت ُم ْنذ ُِر َم ْن يَ ْخشَا َھا‬ ‫ِإنَّ َما أ َ ْن َ‬ ‫﴿‪﴾079:045‬‬ ‫[جالندھری] جو شخص اس سے ڈر رکھتا ہے تم تو اسی کو ڈر‬ ‫سنانے والے ہو‬ ‫تفسير ابن كثير‬ ‫ض َحا َھا‬ ‫ع ِشيَّةً أ َ ْو ُ‬ ‫َكأَنَّ ُھ ْم يَ ْو َم يَ َر ْونَ َھا لَ ْم يَ ْلبَثُوا ِإ َّال َ‬ ‫﴿‪﴾079:046‬‬ ‫[جالندھری] جب وہ اس کو ديکھيں گے (تو ايسا خيال کرينگے)‬ ‫کہ گويا (دنيا ميں صرف) ايک شام يا صبح رہے تھے‬ Name: Description: ...
User generated content is uploaded by users for the purposes of learning and should be used following Studypool's honor code & terms of service.
Studypool
4.7
Trustpilot
4.5
Sitejabber
4.4